خان صاحب میں نے آپ کو ووٹ دے کر غلطی کی؟

جب سے ہوش سنبھالا ہے بہت سی حکومتوں کو اقتدار میں آتے جاتے دیکھا ہے، پی پی پی، ن لیگ، مشرف دور بھی دیکھے ہیں، ہر دور میں یہ لگا کے اس سے پہلے والا دور بہتر تھا . جب تحریک انصاف آئی تو مجھ جیسے لاکھوں پاکستانیوں کو امید کی ایک نئی کرن نظر آئی. تحریک انصاف کو ووٹ بھی دیا اور سپورٹ بھی کیا. آج دو سال سے زیادہ عرصہ کا وقت گزر چکا ہے اور تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں کے ہاتھوں کوئی ایک اچھی تبدیلی نظر نہیں آئی مگر، پانی، گیس، بجلی، آٹا اور چینی کے نرخوں میں تبدیلی بچے بچے کو نظر آئی ہے. عمران صاحب آج بھی دل کہتا ہے آپ کا قصور نہیں آپ کو ٹیم ہی اچھی نہیں ملی.

مسیحی کمیونٹی سے تعلق رکھنے کی وجہ سے ہمیشہ مسیحی ممبر اسمبلی، ان کی قابلیت اور کارکردگی پر ایک گہری نظر رہی ہے . میں آج آپ کو یقین سے کہہ سکتا ہوں جتنے مفاد پرست لوگ موجودہ اسمبلیوں میں بیٹھے ہیں اس کی مثال میں نے اپنی زندگی میں نہیں دیکھی. اگر کہا جائے کہ پہلے والوں کی گردنوں میں سریہ تھا تو ان کی گردنوں میں سونے کا سریہ ہےاور افسوس ان کے اور ہمارے بھی وزیر اعظم عمران خان کو کچھ نظر ہی نہیں آ رہا. خان صاحب آپ نے تو سلیکشن کی بد ترین مثال قائم کر دی ہے اقلیتوں کے لیے. خان صاحب آپ کے چنے ہوئے لوگ اپنے گھر بنانے اور بیلنس بڑھانے میں لگے ہوئے ہیں اور آپ کو بلکل خبر نہیں مل رہی.

اگر وزیراعظم عمران خان نے اپنے غیر مسلم اسمبلی ممبران کی پرفارمنس کو بہتر بنانے کے لیے اقدام نہ اٹھائے تو میں آپ کو یقین دلاتا ہوں تحریک انصاف لاکھوں مسیحی ووٹ کھو دے گی اور آل پاکستان کرسچن لیگ بہت جلد ایسے مفاد پرست سیاسی لوگوں کو دوبارہ اقتدار میں آنے سے روکنے کے لیے منظم تحریک چلائے گی.

We Want Election Not Selection